صفحہ اول / Urdu News / منگی نائی
1301605-manginaaix-1535017917.jpg

منگی نائی


منگی نائی

دنیا کا ہر حجام اپنے آپ کو بہترین حجام تصور کرتا ہے۔ اسی لیے آج تک کسی اچھے حجام سے ملاقات ہی نہیں ہوپائی۔ ویسے مجھے بچپن سے ہی بال بڑھانے، پھر کٹانے اور نئے نئے ہیئر اسٹائلز بنانے کا بڑا شوق رہا ہے لیکن یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ یہ خواہش آج تک خواہش ہی رہی ہے کیوں کہ اچھے حجام آج کل ملتے کہاں ہیں… ملتے ہیں تو بس منگی نائی! ویسے حجاموں میں منگی نائی کی بھی کئی اقسام ہیں: سادہ منگی نائی، نیم منگی نائی اور غیر منگی نائی۔

سب سے پہلے سادہ منگی نائی کا تذکرہ کرلیتے ہیں۔ سادہ منگی نائی وہ حجام ہوتے ہیں جو آپ کو اکثر ندی نالے کے پاس کھڑے نیم کے پیڑ کے نیچے کرسی، شیشہ لگائے اور اپنی پرانی دکان سجائے نظر آئیں گے۔ ان حجاموں کا دعویٰ ہوتا ہے کہ وہ بہترین حجام ہیں۔ لیکن حقیقت میں ان کی مثال سندھ کی حکمراں جماعت کی طرح ہے جس سے متعلق صرف اتنا ہی کہا جاسکتا ہے کہ Try it at your own risk۔

ویسے یہ حجام بال اچھے کاٹیں یا نہ کاٹیں، باتیں بڑی اچھی بناتے ہیں۔ بالکل سندھ کی حکمراں جماعت کی طرح، جس کے رہنماؤں کی باتیں سن کر کچھ دیر کےلیے آپ کو یوں لگتا ہے جیسے نجات دہندہ تو بس یہی ہیں!

حجاموں کی دوسری قسم نیم منگی نائیوں کی ہے جو اکثر آپ کو شیشے والی دکانوں میں ملیں گے۔ جہاں گرم حمام کا خصوصی انتظام ہوتا ہے۔ ان حجاموں سے بال کٹواکر آپ اس وقت تک مطمئن رہ سکتے ہیں جب تک گھر جاکر نہا نہ لیا جائے۔ بالکل اسی طرح جیسے کچھ دن پہلے بارش میں دھلنے کے بعد پنجاب کے پیرس سے پرانا لاہور باہر نکل آیا تھا۔

اب کچھ بات غیر منگی نائی کی بھی کرلیتے ہیں۔ یہ وہ حجام ہوتے ہیں جو خود کو نائی نہیں بلکہ ہیئر ڈریسرز کہلواتے ہیں؛ اور دعویٰ کرتے ہیں کہ آپ ایک بار ان کے پاس آئیں اور اپنا حلیہ تبدیل کرائیں۔ مختصراً انہیں تبدیلی والے نائی بھی کہا جاسکتا ہے کیوں کہ کچھ عرصے کےلیے ہی سہی، یہ آپ کے اندر تبدیلی لے آتے ہیں۔ بالکل اسی طرح جیسے پی ٹی آئی ملک میں تبدیلی لے آئی ہے۔ جیسے پی ٹی آئی نے نیا پاکستان بنایا ہے ویسے ہی یہ غیر منگی نائی آپ کو نیا بنا دیتے ہیں۔ لیکن یہ نیا پن اسی صورت برقرار رہ سکتا ہے جب آپ ان حجاموں پر مسلسل تکیہ کریں اور انہیں پورے پانچ سال مکمل کرنے کا موقع دیں۔ تب ہی آپ کا ’’نیا لُک‘‘ اور نیا پاکستان برقرار رہ سکتا ہے۔

نوٹ: ایکسپریس نیوز اور اس کی پالیسی کا اس بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ بھی ہمارے لیے اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر، فیس بک اور ٹوئٹر آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعارف کے ساتھ [email protected] پر ای میل کردیجیے۔


Source: Urdu Reporter

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں

2085959-sarwarmunirraoopinion-1601190855.jpg

معلق سیاسی نظام… مستقبل کیا ہو گا؟

معلق سیاسی نظام… مستقبل کیا ہو گا؟ Source: Urdu Reporter Comments comments